What is Literature ? | Urdu Notes | ادب کیا ہے

What is Literature ? | Urdu Notes | ادب کیا ہے

ادب   (Literature)

ادب (Literature) عربی زبان کا لفظ ہے اور مختلف النوع مفہوم کا حامل ہے۔ ظہور اسلام سے قبل عربی زبان میں ضیافت اور مہمانی کے معنوں میں استعمال ہوتا تھا۔ بعد میں ایک اور مفہوم بھی شامل ہوا جسے ہم مجموعی لحاظ سے شائستگی کہہ سکتے ہیں۔ عربوں کے نزدیک مہان نوازی لازمہ شرافت سمجھی جاتی ہے، چنانچہ شائستگی، سلیقہ اور حسن سلوک بھی ادب کے معنوں میں داخل ہوئے۔ جو مہمان داری میں شائستہ ہو گا وہ عام زندگی میں بھی شائستہ ہو گا اس سے ادب کے لفظ میں شائستگی بھی آگئی۔ اس میں خوش بیانی بھی شامل ہے۔ اسلام سے قبل خوش بیانی کو علی ادب کہا جاتا تھا۔ گھلاوٹ ، گداز ، نرمی اور شائستگی یہ سب چیزیں ادب کا جزو بن گئیں۔ بنوامیہ کے زمانے میں بھرے اور کوفے میں زبان کے سرمایہ تحریر کو مزید فروغ حاصل ہوا۔ اسی زمانے میں گرامر اور صرف و نحو کی کتب لکھی گئیں تاکہ ادب میں صحت انداز بیان قائم رہے۔ جدید دور میں ادب کے معنی مخصوص قرار دیے گئے۔ ادب کےلیے ضروری ہے کہ اس میں تخیل اور جذبات ہوں اور نہ ہر تحریری کارنامہ ادب کہلا سکتا ہے۔

ادب آرٹ کی ایک شاخ ہے جسے "فن لطیف " بھی کہہ سکتے ہیں۔

جے میتھو آرنلڈ کے نزدیک وہ تمام علم جو کتب کے ذریعے ہم تک پہنچا ہے ، ادب کہلاتا ہے۔

جاری کارڈ ڈینل نیومین کہتا ہے " انسانی افکار ، خیالات اور احساسات کا اظہار زبان اور الفاظ کے ذریعے ادب کہلاتا ہے "۔

حمله ار من جودک کہتا ہے کہ ادب مراد ہے اس تمام سرمایہ خیالات و احساسات سے جو تحریر میں آچکا ہے اور جسے اس طرح ترتیب دیا گیا ہے کہ پڑھنےوالے کو مسرت حاصل ہوتی ہے۔"

اصناف ادب

اصناف ادب کے دو حصے ہیں

اصناف نثر

اصناف سخن

اصناف نثر

بہترین الفاظ کو سادہ مگر عمدہ طریقے سے بیان کرنا اصناف نثر کہلاتا ہے۔ اس میں جملے کی ساخت پر زیادہ توجہ دی جاتی ہے۔ جملے کو معیار کی انداز میں لکھا جاتا ہے۔ اصناف نثر میں افسانے، ناول، آپ بیتی، جگ بیتی داستان اور سفر نامے شامل ہیں۔

اصناف سخن:

بہترین الفاظ کو بہترین انداز میں لکھنا یا بیان کرنا اصناف سخن کھلاتا ہے۔

اس میں جملے کی ساخت پر توجہ نہیں دی جاتی۔ اس میں گرائمر پر بھی خاص توجہ نہیں دی جاتی۔ اس میں جملے کا انداز اتنا دلکش ہوتا ہے کہ فوراول میں گھر کر جاتا ہے۔ اس میں الفاظ کی ترتیب کا خاص خیال نہیں رکھا جاتا۔ اصناف سخن میں غزل، نظم، قصیدہ، مرثیہ، مثنوی اور رباعی وغیرہ شامل ہیں۔

You may like these posts

Show more